in

اگر عورت حیض کا علم اپنے مرد کو نہ بتائیں تو؟

اگر عورت حیض کا علم اپنے مرد کو نہ بتائیں تو؟

اعوذ باللہ من الشیطان الرجیم بسم اللہ الرحمن الرحیم آج کا موضوع ہے عورتوں کے مسائل کا علم اور تعلیم مرد کو حیض کے مسائل اور عقائد میں ممنوع امور کا علم ہونا چاہیے اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی ضروری ہے کہ شوہر کو نماز کے احکام اور دوسری دینے ضرورتوں کی تاریخ دی میں مردوں کو یہ حکم دیا گیا ہے۔

کہ وہ بیویوں کو دوزخ کی آگ سے بچائے اپنے آپ کو اور اپنے گھر والوں کو دوزخ کی آگ سے بچاؤ اصلی مرد کے لئے ضروری ہے کہ وہ اپنی بیوی کو اہل سنت کے عقائد سکھائیں اگر وہ گھر کی طرف مائل ہے تو اسے صحیح راستے پر لائیں اگر وہ دین آپ نے سچ کی برکتیں ہوں جب تیری کرتی ہو تو اسے اللہ سے ڈرائیں اسے حیض اور استحاضہ کے ضروری احکام بھی بتائے اور ان کی قضا ضروری ہے مثال کے طور پر اگر کسی عورت کا سلسلہ ہی بغیرت سب کچھ دن پہلے اس وقت بند ہوا جبکہ ایک رکعت نماز پڑھ سکتی تھی تو اس پر ظہر اور عصر کی نماز کی قضا واجب ہے اور اگر صبح سے پہلے اس وقت بند ہوا جب کہ وہ ایک رکعت پڑھ سکتی تھی تو اسے مغرب اور عشاء کی نماز قضا پڑھنی چاہیے اور عام طور پر ان امور کی رعایت نہیں کرتی ۔

اگر کسی عورت کا شوہر اس کی تعریف کا کفیل ہو تو اس کے لیے جائز نہیں کہ وہ مسائل معلوم کرنے کے لئے علماء کے پاس جائے شعر علم نہ ہو لیکن محکمہ سے معلوم کرکے بتانے کی اہلیت رکھتا ہو تو یہ اس کے لئے باہر نکلنا درست نہیں ہے ہاں تو اور بھی نہ ہو یہ نہ صرف یہ کہ مناسب ہے بلکہ باقی ہیں ایسے میں اگر شوہر منع کرے گا تو گنہگار ہوگا اس کا علم حاصل کرنے کے بعد اب مزید تعلیم کے لئے پوئم کے مدرسوں میں پڑھنے کے لئے شوہر کی اجازت حاصل کرنا ضروری ہے ۔

اگر عورت میں ہے وغیرہ سے متعلق احکامات کا علم حاصل نہ کیا اور اس کے شوہر نے اس سلسلے میں اپنی ذمہ داری پوری نہیں تو کھلا دو میاں بیوی شریک ہوں گے اللہ پاک آپ سب کو دین کی سمجھ عطا فرمائے اور اس کے مطابق زندگی بسر کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین

Leave a Reply

Your email address will not be published.

GIPHY App Key not set. Please check settings

تمہاری داتا دربار والی ویڈیو بھی پاس ہے ویڈیو واٹس ایپ کر دوں گا ، ریمبوکی عائشہ کو دھمکی

زنا کے سدباب کے قرآنی طریقے